Get Adobe Flash player

سی ڈی اے مارکیٹوں میں ترقیاتی کاموں کیلئے ٹاسک فورس کی تشکیل

 ٹریڈرز ایکشن کمیٹی اسلام آباد کے سیکرٹری اور اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سابق سینئر نائب صدر خالد چوہدری نے کہا ہے کہ اسلام آباد کی کسی بھی مارکیٹ میں چار سالوں سے کوئی ترقیاتی کام نہیں ہوئے ہیں اب یہ کھنڈرات بن گئی ہیں ، سی ڈی اے ٹیکس تو باقائدگی سے وصول کر لیتی ہے اور تجاوزات ہٹانے کے نام پر توڑ پھوڑ بھی کر رہی ہے لیکن سہولیات مہیا کرنے میں نا کام ہو گئی ہے چیئر مین سی ڈی اے اور مئیر اسلام آباد فوری طور پر ممبر پلاننگ اسد کیانی کی سربراہی میں ایک ٹاسک فورس تشکیل دے ۔ وہ جمعہ کو  مختلف مارکیٹوں کے عہدیداران کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے مذید کہا کہ اسلام آباد کے سیکٹر آئی ایٹ ، آئی نائن ، آئی ٹین اور جی ٹین کی حالت اتنی خستہ ہو گئی ہے کہ وہ اسلام آباد کا حصہ ہی نہیں لگتی،فٹ پاتھ ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، سٹریٹ لائٹ میسر نہیں ۔ ٹوائلٹ بھی موجود نہ ہیں اور پینے کا پانی تو اسلام آباد کے کسی بھی سیکٹر میں دستیاب نہیں ہے ،خالد چوہدری نے مذید کہاکہ کہ ملٹی سٹوری بلڈنگ تعمیر کرنے کی اجازت کی وجہ سے سیوریج کا نظام تباہ ہو چکا ہے اور سی ڈی اے نے خود ہی تجاوزات قائم کر رکھی ہیں ۔ نئے نقشوں میں بر آمدے ختم کر دئیے گئے ہیں جبکہ انفورسمنٹ کا محکمہ برآمدوں سے تاجروں کا سامان اٹھالیتا ہے جبکہ بدنامی میٹرو پولیٹن کے حصے میںآرہی ہے ۔ انفورسمنٹ کے ایکشن کی وجہ سے خدشہ ہے کہ حکمران جماعت دوسری ایم این اے کی سیٹ بھی نہ کھو دے ۔ انہوں نے وزیر مملکت کیڈ ڈاکٹر طارق سے اپیل کی کہ تاجروں کو سی ڈی اے کی دہشت گردی سے نجات دلائی جائے۔