Get Adobe Flash player

یوریا سیکٹر کو سبسڈی کے بجائے اس پر عائد ایس ٹی ختم کیا جائے،لیفٹننٹ جنرل (ر)محمد شفقات

 لیفٹیننٹ جنرل (ر) محمد شفقات چیئرمین FMPACنے فرٹیلائزر سیکٹرکے بجٹ کے حوالے سے حکومت کو یوریا سیکٹر کو سبسڈی دینے کے بجائے جنرل سیلز ٹیکس ختم کرنے کی تجویز دی ہے ان کے مطابق اس اقدام سے انڈسٹری کے کئی مسائل حل ہوسکیں گے انہوں نے کہا کہ یوریا پر جی ایس ٹی تقریباً اتنا ہی ہے جتنی حکومتی سبسڈی لہٰذا اس سبسڈی کو جی ایس ٹی سے ردو بدل کرنے سے مارکیٹ پر کوئی فرق نہیں پڑے گا ڈی امونیم فاسفیٹ کی قیمتوں میں اضافے پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فرٹیلائزر کمپنیوں نے اسے فکس کرنے پر کبھی حکومت سے اتفاق نہیں کیا چونکہ ہم زیادہ درآمدی ڈی اے پی فروخت کرتے ہیں اس لئے ہم اس کی قیمت فکس نہیں کرسکتے اسی طرح حکومت کو بھی اس کی قیمت فکس نہیں کرنی چاہیے کیونکہ درآمدی ڈی اے پی اور فاسفورک ایسڈ پر بین الاقوامی قیمتوں کا اطلاق ہوتا ہے جو متواتر تبدیل ہوتی ہیں انہوں نے کہا کہ حکومت کو فی ایکڑ پیداوار بڑھانے کیلئے کسان برادری کی بھرپور معاونت کرنی چاہیے اس سے پاکستان نہ صرف غذائی پیداوار میں خود کفیل ہوگا بلکہ کئی پیداواری اشیاء جیسے گندم وغیرہ برآمد کرکے قیمتی زرمبادلہ کما سکتا ہے انہوں نے کہا کہ کھاد بنانے کیلئے گیس پر جی آئی ڈی سی 300روپے ہے جس کو کم کرنے سے کھاد کی قیمتوں میں کمی لائی جاسکتی ہے اور ملکی پیداوار کیلئے بھی خام مال باہر سے منگوایا جاتا ہے ڈی اے پی پر 17فیصد جی ایس ٹی کی مقدار سبسڈی سے زیادہ ہے اس لئے اس کو بھی بھی کم کرنے سے قیمتوں میں کمی لائی جاسکتی ہے۔